Image

December Lot Aya Hai

December Lot Aya Hai

Wo mujh Ko Sonp Gya Fursatain December Me

Wo mujh Ko Sonp Gya Fursatain December Me

ﺗﮩﻤﺘﯿﮟ ﺗﻮ ﻟﮕﺘﯽ ﮨﯿﮟ

ﺗﮩﻤﺘﯿﮟ ﺗﻮ ﻟﮕﺘﯽ ﮨﯿﮟ
ﺭﻭﺷﻨﯽ ﮐﯽ ﺧﻮﺍﮨﺶ ﻣﯿﮟ
ﮔﮭﺮ ﺳﮯ ﺑﺎﮨﺮ ﺁﻧﮯ ﮐﯽ ﮐُﭽﮫ ﺳﺰﺍ ﺗﻮ ﻣﻠﺘﯽ ﮨﮯ
ﻟﻮﮒ ﻟﻮﮒ ﮨﻮﺗﮯ
ﺍﻥ ﮐﻮ ﮐﯿﺎ ﺧﺒﺮ ﺟﺎﻧﺎﮞ !
ﺁﭖ ﮐﮯ ﺍِﺭﺍﺩﻭﮞ ﮐﯽ ﺧﻮﺑﺼﻮﺭﺕ ﺁﻧﮑﮭﻮﮞ ﻣﯿﮟ
ﺑﺴﻨﮯ ﻭﺍﻟﮯ ﺧﻮﺍﺑﻮﮞ ﮐﮯ ﺭﻧﮓ ﮐﯿﺴﮯ ﮨﻮﺗﮯ ﮨﯿﮟ
ﺩﻝ ﮐﯽ ﮔﻮﺩ ﺁﻧﮕﻦ ﻣﯿﮟ ﭘﻠﻨﮯ ﻭﺍﻟﯽ ﺑﺎﺗﻮﮞ ﮐﮯ
ﺯﺧﻢ ﮐﯿﺴﮯ ﮨﻮﺗﮯ ﮨﯿﮟ
ﮐﺘﻨﮯ ﮔﮩﺮﮮ ﮨﻮﺗﮯ ﮨﯿﮟ
ﮐﺐ ﯾﮧ ﺳﻮﭺ ﺳﮑﺘﮯ ﮨﯿﮟ
ﺍﯾﺴﯽ ﺑﮯ ﮔﻨﺎﮦ ﺁﻧﮑﮭﯿﮟ
ﮔﮭﺮ ﮐﮯ ﮐﻮﻧﮯ ﮐﮭﺪﺭﻭﮞ ﻣﯿﮟ ﭼﮭُﭗ ﮐﮯ ﮐﺘﻨﺎ ﺭﻭﺗﯽ ﮨﯿﮟ
ﭘﮭﺮ ﺑﮭﯽ ﯾﮧ ﮐﮩﺎﻧﯽ ﺳﮯ
ﺍﭘﻨﯽ ﮐﺞ ﺑﯿﺎﻧﯽ ﺳﮯ
ﺍﺱ ﻗﺪﺭ ﺭﻭﺍﻧﯽ ﺳﮯ ﺩﺍﺳﺘﺎﻥ ﺳﻨﺎﻧﮯ
ﺍﻭﺭ ﯾﻘﯿﻦ ﮐﯽ ﺁﻧﮑﮭﯿﮟ
ﺳﭻ ﮐﮯ ﻏﻤﺰﺩﮦ ﺩﻝ ﺳﮯ ﻟﮓ ﮐﮯ ﺭﻭﻧﮯ ﻟﮕﺘﯽ ﮨﯿﮟ
ﺗﮩﻤﺘﯿﮟ ﺗﻮ ﻟﮕﺘﯽ ﮨﯿﮟ
ﺭﻭﺷﻨﯽ ﮐﯽ ﺧﻮﺍﮨﺶ ﻣﯿﮟ
ﺗﮩﻤﺘﻮﮞ ﮐﮯ ﻟﮕﻨﮯ ﺳﮯ
ﺩﻝ ﺳﮯ ﺩﻭﺳﺖ ﮐﻮ ﺟﺎﻧﺎﮞ
ﺍﺏ ﻧﮉﮬﺎﻝ ﮐﯿﺎ ﮐﺮﻧﺎ
ﺗﮩﻤﺘﻮﮞ ﺳﮯ ﮐﯿﺎ ﮈﺭﻧا

اسے کہنا۔۔۔۔۔

اسے کہنا۔۔۔۔۔
ہمیں کب فرق پڑتا ہے۔۔۔۔۔۔؟
کہ۔۔۔۔۔۔۔!
ہم تو شاخ سے ٹوٹے ہوئے پتّے۔۔۔۔۔۔۔
بہت عرصہ ہوا ہم کو۔۔۔۔۔۔
رگیں تک مر چکیں دل کی۔۔۔۔۔۔
کوئی پاوٴں تلے روندے۔۔۔۔۔۔
جلا کر راکھ کر ڈالے۔۔۔۔۔۔۔۔
ہوا کے ہاتھ پر رکھ کر۔۔۔۔۔۔
کہیں بھی پھینک دے ہم کو۔۔۔۔۔
سپردِ خاک کر ڈالے۔۔۔۔۔۔
ہمیں اب یاد ہی کب ہے۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔؟
کہ ہم بھی ایک موسم تھے۔
Image

Wo Sab Ilzaam mere Naam Kar K Urdu Poetry

Wo Sab Ilzaam mere Naam Kar K  Urdu Poetry

Image

Isy Hum Khuda Ka Karam Janty Hain Rabi Ul Awal Poetry

Isy Hum Khuda Ka Karam Janty Hain Rabi Ul Awal Poetry

Image

December Ja Raha Hai Best December Poetry

December Ja Raha Hai Best December Poetry

Image

Fana Poetry By Marayam Abbas

Fana Poetry By Marayam Abbas

Image

Chalo Hum Kuch Khas Karty Hain By Maryam Abbas

Chalo Hum Kuch Khas Karty Hain By Maryam Abbas